دنیا
23 مئی ، 2022

جب پالتو چمپنزی نے خاتون کا چہرہ، ہاتھ اور جسم کے متعدد حصے چبا دیے

یہ چمپنزی پہلے کارلا کو بہت اچھی طرح پہچانتا تھا / اسکرین شاٹ
یہ چمپنزی پہلے کارلا کو بہت اچھی طرح پہچانتا تھا / اسکرین شاٹ

چمپنزی کو ایک بہت ذہن جاندار تصور کیا جاتا ہے جو متعدد ایسے کام کرنے کی صلاحیت بھی رکھتا ہے جو صرف انسان ہی کرسکتے ہیں۔

مگر بندر کی اس نسل کے جاندار کو پالتو بناکر پالنا بہت خطرناک بھی ثابت ہوسکتا ہے اور ایسا ایک خوفناک واقعے سے ثابت ہوا جو 2009 میں پیش آیا تھا۔

ٹریوس نامی نر چمپنزی 2000 کی دہائی میں امریکا میں بہت زیادہ مقبول تھا جو متعدد ٹی وی شوز، اشتہارات میں جلوہ گر ہوا مگرپھر جو ہوا وہ دل دہلا دینے والا تھا کیونکہ اس نے اپنی مالکہ کی دوست پر حملہ کرنے اسے نابینا کردیا ، متعدد جسمانی حصوں کو چبا ڈالا اور چہرہ مکمل طور پر بدل کر رہ گیا۔

ٹریوس کون تھا؟

ٹریوس کو ساندرا اور جیروم ہیرولڈ نے 1995 میں اس وقت گود لیا جب اس کی پیدائش کو 3 دن ہوئے تھے اور اس کا نام ساندرا کے پسندیدہ گلوکار ٹریوس ٹرٹ پر رکھا گیا تھا۔

یہ چمپنزی ریاست کنکٹیکٹ کے علاقے اسٹام فورڈ سے تعلق رکھنے والے خاندان کا حصہ بن گیا اور ہمیشہ اس جوڑے کے ساتھ ہی ہوتا، جو اکثر اسے اپنے ساتھ سفر اور شاپنگ کے لیے بھی لے جاتے۔

جیروم ہیرولڈ ایک ٹرک کمپنی کے لیے کام کرتے تھے اور ٹریوس وہاں تصاویر کھچوانا پسند کرتا اور اس خاندان کو جاننے والوں بہت جلد اس چمپنزی کو پسند کرنے لگے تھے۔

مشہور کیسے ہوا؟

ٹریوس دی چمپ / فوٹو بشکریہ وکی پیڈیا
ٹریوس دی چمپ / فوٹو بشکریہ وکی پیڈیا

یہ اکثر جیروم کے ٹرک میں بیس بال شرٹ پہن کر سفر کرتا اور کبھی بھی سیٹ بیلٹ باندھنا نہ بھولتا، یہاں تک کہ اس نے پولیس اہلکاروں کو بھی دوست بنالیا تھا۔

پیدائش کے بعد سے انسانوں کے ساتھ رہنے کی وجہ سے وہ لوگوں سے گھبراتا نہیں تھا بلکہ ساندرا اور جیروم کے قریبی افراد سے اچھے تعلقات بھی قائم کرلیے۔

اس جوڑے کے ایک پڑوسی کا تو کہنا تھا کہ ٹریوس میری بات ماننے کے معاملے میں میرے بھتیجوں سے بہتر ہے ۔

اس چمپنزی نے اپنے انسانی خاندان کی متعدد چیزوں کو بھی سیکھ لیا یعنی چابی سے دروازے کھولنا، خود کپڑے پہننا، پودوں کو پانی دینا اور گھوڑوں کو کھانا کھلانا۔

آئس کریم اسے بہت پسند تھی اور اس نے یہ بھی سیکھ لیا کہ کب آئس کریم ٹرک گھر کے پاس سے گزرتے ہیں جبکہ ٹیکنالوجی کا شوق بڑھا تو اس نے کمپیوٹر میں لاگ ان ہونا بھی سیکھ لیا جس میں وہ تصاویر دیکھتا رہتا، ریموٹ کنٹرول سے ٹی وی چلاتا اور بیس بال مقابلے دیکھنے سے اسے عشق تھا۔

یہاں تک کہ اس نے گاڑی کو چلانا بھی سیکھ لیا تھا اور اسے کئی بار گاڑی چلاتے ہوئے دیکھا گیا۔

خاندان کے حالات کیسے بدلے؟

2004 میں جیروم کینسر کے باعث چل بسے اور بہت جلد ساندرا کا اکلوتا بیٹا بھی ٹریفک حادثے کے باعث ہلاک ہوگیا تو غمزدہ خاتون کے لیے ٹریوس کا ساتھ غنیمت بن گیا۔

ان واقعات کے بعد وہ دونوں ہمیشہ ایک ساتھ ہی ہوتے ۔

مگر ٹریوس کے متاثر کن رویے کے باوجود ایسی علامات سامنے آئی تھیں جن سے عندیہ ملتا تھا کہ سب کچھ ٹھیک نہیں۔

2003 میں جیروم ہیرولڈ کی گاڑی میں سفر کررہا تھا اور ٹریفک جام میں پھنس گیا۔

اس موقع جیروم اور ساندرا نکلنے کا انتظار کررہے تھے جب وہاں سے گزرنے والے ایک شخص کوئی چیز اٹھا کر گاڑی کے اندر پھینک دی جو ٹریوس کو جاکر لگی۔

وہ چیز لگنے کے بعد چمپنزی نے پرسکون انداز سے سیٹ بیلٹ کو کھولا اور پھر گاڑی سے نکل کر اس شخص کے پیچھے بھاگا جس نے وہ چیز پھینکی تھی۔

خوش قسمتی سے ٹریوس اسے پکڑنے میں کامیاب نہیں ہوسکا مگر پولیس اہلکاروں کو اسے واپس گھر لے جانے میں ضرور کئی گھنٹے لگ گئے ۔

اس واقعے کے بعد ریاسٹ کنکٹیکٹ میں ایک قانون بھی منظور کیا گیا جس کے تحت 22 کلوگرام سے زیادہ وزن کے ممالیہ جانوروں کو پالنے پر پابندی عائد کردی گئی، مگر اس کا اطلاق 2009 میں ہوا۔

اس وقت ٹریوس نے قوانین کی خلاف ورزی کی تھی مگر اسے مالکان کے ساتھ رہنے کی اجازت دی گئی کیونکہ حکام کا ماننا تھا کہ اس سے کسی کو خطرہ لاحق نہیں۔

مگر 6 سال بعد ان کا خیال غلط ثابت ہوگیا۔

2009 کا خوفناک واقعہ

کارلا نیش اور ٹریوس / فوٹو بشکریہ دی مرر
کارلا نیش اور ٹریوس / فوٹو بشکریہ دی مرر

55 سالہ کارلا نیش 16 فروری 2009 کو اپنی دوست ساندرا سے ملنے آئی تھیں اور اس وقت ٹریوس گاڑی کی چابیاں لے کر گھر سے باہر نکل گیا تھا، جس پر کارلا نے اسے واپس لانے کے لیے اپنی دوست کی مدد کی۔

مگر جب چمپنزی نے دیکھا کہ کارلا نے اس کے ایک پسندیدہ کھلونے کو پکڑا ہوا ہے تو وہ اچانک مشتعل ہوگیا اور خاتون پر حملہ کردیا۔

ٹریوس کارلا کو برسوں سے جانتا تھا مگر خاتون نے حال ہی میں اپنے بالوں کے انداز کو بدلا تھا۔

ٹریوس نے حملہ کرکے کارلا کو شدید نقصان پہنچایا اور اس موقع پر 70 سالہ ساندرا اپنی دوست کی مدد کے لیے تیزی سے آگے آئی اور چمپنزی کو بیلچے سے مارا اور جب اس نے کارلا کو نہیں چھوڑا تو چھری بھی گھونپ دی۔

واقعے کے بعد ساندرانے کہا تھا 'میرے لیے ٹریوس کے جسم میں چھری گھونپنا ایسا ہی تھا جیسے میں نے اپنے اندر چھری کو گھونپ لیا ہو'۔

چھری سے حملے کے بعد ساندرا نے ایمرجنسی سروسز سے رابطہ کیا جن کو ابتدا میں لگا کہ وہ مذاق کررہی ہیں مگر جب وہ چیخنے لگی کہ چمپنزی کارلا کو کھا رہا ہے تو انہیں اندازہ ہوا کہ یہ مذاق نہیں بلکہ حقیقت ہے۔

طبی عملہ وہاں سب سے پہلے پہنچا مگر کچھ کرنے سے قبل پولیس کی آمد کا انتظار کیا اور جب پولیس اہلکار اور طبی عملے کے افراد گھر کے اندر پہنچے تو ایک خوفناک نظارہ ان کے سامنے تھا۔

دوسری جانب جیسے ہی پولیس اہلکار موقع پر پہنچے تو ٹریوس پرسکون انداز سے چلتا ہوا گھر سے نکلا اور پولیس کی گاڑی کا دروازہ کھولنے کی کوشش کرنے لگا۔

لاک ہونے کی وجہ سے جب دروازہ نہیں کھولا تو اس نے غصے میں اسے توڑ دیا اور پھر چلتا ہوا ڈرائیور کے دروازے کی جانب جاکر اسے کھولنے لگا۔

وہاں موجود پولیس اہلکار فرینک شیفری نےگھبرا کر ٹریوس پر متعدد فائر کیے جس کے بعد وہ واپس گھر میں چلا گیا جہاں اسے پنجرے کے باہر مردہ پایا گیا۔

واقعے کے بعد کیا ہوا؟

کارلا کا چہرہ آج تک ٹھیک نہیں ہوسکا / فوٹو بشکریہ دی مرر
کارلا کا چہرہ آج تک ٹھیک نہیں ہوسکا / فوٹو بشکریہ دی مرر

اس واقعے کے بعد کارلا کے لیے زندگی کبھی بھی پہلی جیسی نہیں رہی اور اس کے زخموں کو طبی عملے نے دہشتناک قرار دیا تھا۔

ٹریوس نے ہاتھوں، ناک کو کاٹ ڈالا تھا ، آنکھیں نکال لی تھیں اور چہرے کے درمیانی حصے کی ہڈیوں کو مکمل طور پر توڑ دیا تھا۔

چمپنزی کے حملے کے بعد کارلا کو سرجری کے لیے لے جایا گیا اور 7 گھٹے تک آپریشن ہوا۔

واقعے کے چند ماہ بعد کارلا اوپرا وانفرے کے شو کا حصہ بنیں اور پہلی بار اس حوالے سے بات کی۔

2 سال بعد کارلا کے ہاتھ اور چہرے کا ٹرانسپلانٹ ہوا ، ابتدا میں ہاتھ کی پیوندکاری کامیابی رہی مگر نمونیا اور دیگر انفیکشنز کے باعث اسے نکالنا پڑا۔

اب کارلا کا چہرہ کسی حد تک بہتر ہوچکا ہے اور وہ ایک کیئر سینٹر میں رہائش پذیر ہیں۔

ٹریوس کے مرنے کے 2 سال بعد ساندرا بھی علالت کے باعث چل بسی تھیں۔

ٹریوس کی لاش کا معائنہ کرنے سے معلوم ہوا کہ اس کا جسمانی وزن بہت زیادہ تھا اور اس پر چھری سے وار ہوئے تھے جبکہ جسمانی نظام میں ایسی دوا کے اثرات پائے گئے جو جارحانہ رویے کو بڑھاتی ہے۔

اس واقعے کے بعد امریکی کانگریس نے چمپنزی، مگرمچھ وغیرہ کو پالنے پر پابندی کے قانون کی منظوری دی مگر اسے کبھی امریکی سینیٹ میں پیش نہیں کیا گیا۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM